بند کریں
شاعری ڈاکٹر محمود الحسن کنجاہی

پھر سفر کا وسط دُکھتے آبلے ہیں اور میں

-

phir safar ka wast


(215) ووٹ وصول ہوئے