بند کریں
شاعری فرزانہ نیناں

دشمن جاں کوءی مہمان ببناتی ہے

-

dushman e jaan koi mehmaan banati hooN main


(268) ووٹ وصول ہوئے