بند کریں
شاعری فراق گورکھپوری

کم کہاں گل سے خار ہے اے دوست

-

kam kahaaN gul se khaar hae aey dost


(0) ووٹ وصول ہوئے