بند کریں
شاعری غافر شہزاد

مل کر بھی کب مل جانے کی آس بجھی

-

mill kar bhi kab mill jane ki ass bhuji


(197) ووٹ وصول ہوئے