بند کریں
شاعری حامد رسول مسافر

ہمارے بعد کھل کر شہر کی تنہائیاں روئیں

-

hamare baad khul kar sheher


(234) ووٹ وصول ہوئے