بند کریں
شاعری اسحاق ظفر

نہ آس ہے نہ یاس ہے

-

na ass hai


(2837) ووٹ وصول ہوئے