بند کریں
شاعری جاوید اختر

کبھی یوں بھی تو ہو

-

Khabhi You


(294) ووٹ وصول ہوئے