بند کریں
شاعری کامران رضوی

کچھ روز کے لئے تو کوئی بات ہو گئی

-

kuch rooz k liye tu koi baat ho gi


(179) ووٹ وصول ہوئے