بند کریں
شاعری منظور ثاقب

تو بھی سقراط ہے

-

tu bhi suqraat hai


(287) ووٹ وصول ہوئے