بند کریں
شاعری میرانیس

گرد ہے اکسیر ‘ خاکِ کربلا کے سامنے

-

gard hai akseer khaak e karbala k samne


(341) ووٹ وصول ہوئے