بند کریں
شاعری مرزاداغ دہلوی

ایک ہی رنگ ہے سب کا یہ تماشا کیسا

-

aik hir ang hai sab ka


(167) ووٹ وصول ہوئے