بند کریں
شاعری مرزاداغ دہلویدیوان داغ

وہ بت کرے خدائی کی خدا کی شان

-

Who butt karey


(161) ووٹ وصول ہوئے