بند کریں
شاعری مرتضیٰ برلاس

ہے ادھر پھر وہی شبخوں کا ارادہ برلاس

-

hai udher phir wohi shabkhoon ka irada barlas


(2802) ووٹ وصول ہوئے