بند کریں
شاعری نوید اکبر

دھڑکنوں کو قرار کی خواہش

-

dharaknoon ko qarar ki khahish


(205) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان