بند کریں
شاعری نوید اکبر

کچھ اشک ہمارے بہنے دو

-

kuch ashk hamaray behnay do


(226) ووٹ وصول ہوئے