بند کریں
شاعری شاہین کاظمی

کوئی پھول تھا تری یاد کا

-

Koi phool tha teri yaad ka


(2183) ووٹ وصول ہوئے

: متعلقہ عنوان