بند کریں
شاعری شاہد واسطی

جو سچائی پہ مرتا ہو یہاں کوئی نہیں رہتا

-

ju sachai pey marta hoo yahan koi nahi rehta


(218) ووٹ وصول ہوئے