بند کریں
شاعری تابش کمال

رات اگر کچھ گہر پرو جائے

-

raat ager kuch geher proo jaye


(2190) ووٹ وصول ہوئے