بند کریں
شاعری تنویر سیٹھی

وہ ایسے خامشی کی زباں بولنے لگے

-

Woh aisay khamshi ki zabaan bolnay lagay


(0) ووٹ وصول ہوئے