بند کریں
شاعری زاہد شیخ

جب زندگی کو تہرا سہارا نہ مل سکا

-

jab zindagi ko tera sahara na mill saka


(181) ووٹ وصول ہوئے