بند کریں
شاعری زاہد شیخ

کہں بھی جائے اسی کی طرف ہی جائے نظر

-

kahin bhi jaye uss ki taraf hi jaye nazar


(197) ووٹ وصول ہوئے