بند کریں
شاعری زیب غوری

بس ایک پردہء اغماض تھا کفن اُس کا

-

bas ek pardae aghmaaz tha kafan uska


(0) ووٹ وصول ہوئے