Sitara Ap Ka

ستارا آپ کا

آسمانِ وقت پر روشن ستارا آپ کا

نقص مجھ کو، فائدہ سارے کا سارا آپ کا

دکھ ھؤا یہ جان کر، بیٹے الگ رہنے لگے

کچھ بتاؤ، کس طرح اب ھے گزارا آپ کا؟

باندھ لو رختِ سفر پھر سے مدینہ کے لیئے

کچھ نہیں اس کے سوا بس اب تو چارہ آپ کا

مالکن نے ہاتھ سے پکڑا، نکالا ڈانٹ کر

شب، مِری بیٹھک پہ تھا نوکر بچارا آپ کا

مجھ سے مت پوچھو کہ میں نے کس طرح کے غم سہے

کس طرح دکھ جھیل کر قرضہ اُتارا آپ کا

بھائی نے بے دخل مجھ کو کر دیا میراث سے

اور یہ تک کہہ دیا، اس میں نہ پارا آپ کا۔

ناشتے پہ پھر سے بیگم سے لڑائی ھو گئی؟

مجھ پہ نکلا آج پھر غصہ وہ سارا آپ کا

ماں منع کرتی رہی مجھ کو شراکت سے مگر

پڑ گیا سر پر مِرے آخر خسارا آپ کا

روز کا معمول ھے حق تلفیاں کرنا رشیدؔ

کب تلک آخر رہے گا، یہ اجارا آپ کا

پروفیسر رشید حسرت

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(468) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Professor Rasheed Hasrat, Sitara Ap Ka in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 87 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Professor Rasheed Hasrat.