Darya Bhi Wohi, Pyaas Ka Imkaan Bhi Wohi Hai

دریا بھی وہی، پیاس کا امکاں بھی وہی ہے

دریا بھی وہی، پیاس کا امکاں بھی وہی ہے

موسم بھی وہی، دشت کا داماں بھی وہی ہے

بدلے ہیں کتابوں کے سرورق ہی یارو

ورنہ تو ہر اک باب کا عنواں بھی وہی ہے

چہرے ہی توبدلے ہیں مہ و سال میں اپنے

وحشت بھی وہی، رنج کا ساماں بھی وہی ہے

لفظوں کی وہی کاٹ، وہی طرز ادا ہے

لکھی ہوئی تقریر کا عنواں بھی وہی ہے

احباب کے تیور ہی تو بدلے ہیں وگرنہ

اک عمرہوئی حلقہ یاراں بھی وہی ہے

قیصرؔ نہیں بدلے ہیں شب و روز ہمارے

منصف بھی وہی، وقت کا یزداں بھی وہی ہے

قیصر عباس

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(761) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Qaisar Abbas, Darya Bhi Wohi, Pyaas Ka Imkaan Bhi Wohi Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 1 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Qaisar Abbas.