Bajuz Tumahray Kisi Se Koi Sawal Nahi

بجز تمہارے کسی سے کوئی سوال نہیں

بجز تمہارے کسی سے کوئی سوال نہیں

کہ جیسے سارے زمانے سے بول چال نہیں

یہ سوچتا ہوں کہ تو کیوں نظر نہیں آتا

مری نگاہ نہیں یا ترا جمال نہیں

تجاہل اپنی جفاؤں پہ اور محشر میں

خدا کے سامنے کہتے ہو تم خیال نہیں

یہ کہہ کے جلوے سے بے ہوش ہو گئے موسیٰ

نگاہ اس سے ملاؤں مری مجال نہیں

میں ہر بہار گلستاں پہ غور کرتا ہوں

جلا نہ ہو مرا گھر ایسا کوئی سال نہیں

خطا معاف کہ سرکار منہ پہ کہتا ہوں

بغیر آئینہ کہہ لو مری مثال نہیں

میں چاندنی میں بلاتا تو ہوں وہ کہہ دیں گے

قمرؔ تمہیں مری رسوائی کا خیال نہیں

قمرجلالوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(267) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Qamar Jalalvi, Bajuz Tumahray Kisi Se Koi Sawal Nahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 55 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Qamar Jalalvi.