Dono Hain Un Ke Hijar Ka Haasil Liye Hue

دونوں ہیں ان کے ہجر کا حاصل لئے ہوئے

دونوں ہیں ان کے ہجر کا حاصل لئے ہوئے

دل کو ہے درد درد کو ہے دل لئے ہوئے

دیکھا خدا پہ چھوڑ کے کشتی کو ناخدا

جیسے خود آ گیا کوئی ساحل لئے ہوئے

دیکھو ہمارے صبر کی ہمت نہ ٹوٹ جائے

تم رات دن ستاؤ مگر دل لئے ہوئے

وہ شب بھی یاد ہے کہ میں پہنچا تھا بزم میں

اور تم اٹھے تھے رونق محفل لئے ہوئے

اپنی ضروریات ہیں اپنی ضروریات

آنا پڑا تمہیں طلب دل لئے ہوئے

بیٹھا جو دل تو چاند دکھا کر کہا قمرؔ

وہ سامنے چراغ ہے منزل لئے ہوئے

قمرجلالوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(705) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Qamar Jalalvi, Dono Hain Un Ke Hijar Ka Haasil Liye Hue in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 55 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Qamar Jalalvi.