Ado Ke Sath Aakhri Muahida Nahin Hova

عدو کے ساتھ آخری معاہدہ نہیں ہوا

(4309) ووٹ وصول ہوئے

قمر رضا شہزاد کی مزید شاعری

پناہ مانگتا ہوں بے پناہ ہونے سے

Panah Mangta Hoon Bepanah Hone Se

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

میں برگزیدہ شجر ہوں مجھے سلام کرو تمام عمر مرے سائے میں قیام کرو محبتوں کے کئی واقعے سنائے گا اگر کبھی کسی دریا سے تم کلام کرو یہ لوگ بات سمجھتے نہیں محبت سے سو تیغ تیز کسی روز بے نیام کرو وضو کیا ہے لہو سے تو پھر سر میداں نماز وصل پڑھو عشق کو امام کرو یہاں تو ہم بھی نہیں آج کل سو آوء تم ہمارے حجرہء تنہائی میں قیام کرو

Main Barguzedha Shajar Hoon Mujhe Salam Karo

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

شہر خواہش کے دروبام سے باندھے ہوئے رکھ

Shehar E Khwahish Ke Dar O Baam Se Bandhe Huye Rakh

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

ماں

Maan

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

جو روشنی کے ہر ایک دھارے میں جاگتا ہے

Ju Roshni K Har Aik Dhare Main Jagta Hai

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

روحی بانو کے لئے

Rohi Banu K Liye

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

ضرور ہے کسی بچے کی گور مجھ میں بھی

Zaroor Hai Kissi Bache Ki Gour Mujh Main Bhi

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

کوئی بلند بھی ہو میر تو

Koi Buland Bhi Ow Mir To

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Qamar Raza Shahzad, Ado Ke Sath Aakhri Muahida Nahin Hova in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social, Friendship Urdu Poetry. Also there are 82 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Sad, Social, Friendship poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Qamar Raza Shahzad.