Khwabon Phoolon Aur Duaon Jaisa Tha

خوابوں پھولوں اور دعائوں جیسا تھا

(5124) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

قمر رضا شہزاد کی مزید شاعری

کہیں چراغ کہیں آئنے سجاوں گا

Kahin Chirag Kahin Aaine Sajaunga

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

یونہی تو مرے ہاتھ میں کاسہ نہیں آیا

Yunhi Tu Mere Hath Main Kasa Nahi Aya

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

جو رازداں تھی رازداں نہیں رہی

Jo Raazda Thi Raada Nahin Rahi

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

خدا کا شکر ہے انکار کی طرف آیا

Khuda Ka Shukra Hai Inkar Ki Taraf Aaya

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

میں برگزیدہ شجر ہوں مجھے سلام کرو تمام عمر مرے سائے میں قیام کرو محبتوں کے کئی واقعے سنائے گا اگر کبھی کسی دریا سے تم کلام کرو یہ لوگ بات سمجھتے نہیں محبت سے سو تیغ تیز کسی روز بے نیام کرو وضو کیا ہے لہو سے تو پھر سر میداں نماز وصل پڑھو عشق کو امام کرو یہاں تو ہم بھی نہیں آج کل سو آوء تم ہمارے حجرہء تنہائی میں قیام کرو

Main Barguzedha Shajar Hoon Mujhe Salam Karo

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

میں ایک عام آدمی مرا لہو بہایئے

Main Aik Aam Admi Mera Lahu Bahaiye

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

اسی لئے میں کسی سے خفا نہیں صاحب

Issi Liye Main Kissi Se Khafa Nahi Sahib

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

میں کس گنتی میں ہوں

Main Kiss Ginti Main Hoon

قمر رضا شہزاد (Qamar Raza Shahzad)

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Qamar Raza Shahzad, Khwabon Phoolon Aur Duaon Jaisa Tha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love Urdu Poetry. Also there are 82 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Qamar Raza Shahzad.