Misl Bahisht Khush Numa Kon O Makaan Mein

مثل بہشت خوش نما کون و مکان میں

مثل بہشت خوش نما کون و مکان میں

انسان مبتلا ہے عجیب امتحان میں

بجھتی نہیں ہے کوشش دریا کے باوجود

یہ کیسی تشنگی ہے مرے جسم و جان میں

وہ دھوپ میں کھڑا ہے بڑے اطمینان سے

لو دے رہا ہے میرا بدن سائبان میں

کیوں نام انتساب میں لکھا گیا مرا

کردار جب نہیں تھا مرا داستان میں

اس بار پستیاں بھی میسر نہ آئیں گی

شل ہو گئے جو بال و پر اونچی اڑان میں

وابستہ تجھ سے عظمت شعر و سخن ہوئی

اس بات کو بھی رکھنا خیالؔ اپنے دھیان میں

رفیق خیال

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(277) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Rafique Khayal, Misl Bahisht Khush Numa Kon O Makaan Mein in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 41 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Rafique Khayal.