Naram Lehjey Mein Tahammul Se Zara Baat Karo

نرم لہجے میں تحمل سے ذرا بات کرو

نرم لہجے میں تحمل سے ذرا بات کرو

پھر بصد شوق سر عام مجھے مات کرو

یا نثار آج کرو مجھ پہ تمام اپنے ہنر

یا نظر بند مرے سارے کمالات کرو

میں روایات سے باغی تو نہیں ہوں لیکن

تم سے ممکن ہو تو تبدیل خیالات کرو

ایک مدت سے مرے دل کا نگر ہے ویراں

آؤ اس دشت پہ تم پھولوں کی برسات کرو

فصل اجالوں کی سیہ بخت زمیں اگلے گی

زر نگار اپنے ذرا کشف و کرامات کرو

اس طرح مل کے بچھڑنا تو قیامت ہوگا

مشتعل تم نہ مری جاں مرے جذبات کرو

بے نیازی تو ملا کرتی ہے دنیا سے خیالؔ

تم کسی طور نہ تجدید غم ذات کرو

رفیق خیال

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(467) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Rafique Khayal, Naram Lehjey Mein Tahammul Se Zara Baat Karo in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 41 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Rafique Khayal.