Dasht Ne Talib Guzar Kiya Hai Mujh Ko

دشت نے طالب گلزار کیا ہے مجھ کو

دشت نے طالب گلزار کیا ہے مجھ کو

میری وحشت نے گنہ گار کیا ہے مجھ کو

گوشہ‌‌ٔ ذات میں آباد ہے دنیا میری

خود کی ہستی نے گرفتار کیا ہے مجھ کو

نقل و حرکت نے بنایا ہے تماشا میرا

بد حواسی نے سزاوار کیا ہے مجھ کو

اب مرے کام جو آئے تو ہنر بھی کیسے

دل نے شہرت کا پرستار کیا ہے مجھ کو

جسم کے سحر سے نکلا تو یہ جانا میں نے

روح نے صورت افکار کیا ہے مجھ کو

کیا بتاؤں کہ ازل سے ہے تمنا جس کی

اس نے کس کس کا طلب گار کیا ہے مجھ کو

خود سے لڑتا ہوں تو لگتا ہے کہ رن میں راحتؔ

وقت نے قافلہ سالار کیا ہے مجھ کو

راحت حسن

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(334) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Rahat Hasan, Dasht Ne Talib Guzar Kiya Hai Mujh Ko in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 32 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Rahat Hasan.