Apni Ashafta Tabiyat Ka Maza Leta Hoon

اپنی آشفتہ طبیعت کا مزہ لیتا ہوں

اپنی آشفتہ طبیعت کا مزہ لیتا ہوں

کش لگاتا ہوں اذیت کا مزہ لیتا ہوں

آنکھ بھی سامنے ہونے پہ یقیں رکھتی ہے

خواب در خواب سہولت کا مزہ لیتا ہوں

تو مرے حصے کی وحشت کا مزہ لیتا ہے

اور میں تیری مشیت کا مزہ لیتا ہوں

چاندنی سرد ہوا پھول پرندے خوشبو

رات بھر تیری ضرورت کا مزہ لیتا ہوں

جھیل میں آگ لگاتا ہوں بڑی فرصت سے

اور پھر بیٹھ کے فرصت کا مزہ لیتا ہوں

خوف کھاتا ہوں کہیں خود سے نہ اکتا جاؤں

وقت کی تازہ روایت کا مزہ لیتا ہوں

راحل بخاری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(713) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Rahil Bukhari, Apni Ashafta Tabiyat Ka Maza Leta Hoon in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 15 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Rahil Bukhari.