Suna Hai Chup Ki Bhi Pukar Hoti Hai

سنا ہے چپ کی بھی کوئی پکار ہوتی ہے

سنا ہے چپ کی بھی کوئی پکار ہوتی ہے

یہ بد گمانی مجھے بار بار ہوتی ہے

خیال و خواب کی دنیا سراب کی دنیا

نظر فقیر کی پردے کے پار ہوتی ہے

عذاب دیدہ کوئی رنگ سینچتے کیسے

خزاں گزیدگی آشفتہ بار ہوتی ہے

میں اپنے حصے کے منظر اجالنے سے رہا

یہ آگہی تو بہت دل فگار ہوتی ہے

امید ہی سے زمانے میں شاد کامی ہے

یہی وہ شاخ ہے جو سایہ دار ہوتی ہے

یہ رات ماتمی ملبوس ہی میں جچتی تھی

یہ رات ہی تو ہمیں پرسہ دار ہوتی ہے

میں جی رہا ہوں تو جینے کا حوصلہ دیکھو

یہ زخم کوشی تغافل شعار ہوتی ہے

راحل بخاری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(618) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Rahil Bukhari, Suna Hai Chup Ki Bhi Pukar Hoti Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 15 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Rahil Bukhari.