Deyaar Shahid Balqis Ada Se Aaya Hon

دیار شاہد بلقیس ادا سے آیا ہوں

دیار شاہد بلقیس ادا سے آیا ہوں

میں اک فقیر ہوں شہر سبا سے آیا ہوں

جہان نو کی طلب اور اس خرابے میں

سواد اصطخر و نینوا سے آیا ہوں

شب سیاہ خزاں کے سموم و صرصر تک

نگار خانۂ صبح و صبا سے آیا ہوں

ابھی کہاں ہے مجھے نوحہ‌ و نوا کا شعور

کہ ایک ناحیۂ بے نوا سے آیا ہوں

مرے رموز کا عرفاں کسے نصیب کہ میں

سروش روح ازل ہوں سما سے آیا ہوں

دمک رہی ہے زمان و مکاں کی پیشانی

ستارۂ ابدی ہوں خلا سے آیا ہوں

تمہارے غنچہ و گل سے غرض نہیں مجھ کو

ادھر اشارۂ باد صبا سے آیا ہوں

رئیس امروہوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1259) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of RAIS AMROHVI, Deyaar Shahid Balqis Ada Se Aaya Hon in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 30 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of RAIS AMROHVI.