Khandar Main Dafan Hui Hain Imaratain Kiya Kiya

کھنڈر میں دفن ہوئی ہیں عمارتیں کیا کیا

کھنڈر میں دفن ہوئی ہیں عمارتیں کیا کیا

لکھی ہیں کتبۂ دل پر عبارتیں کیا کیا

حصار برف میں رہنا کبھی سرابوں میں

سفر کے شوق نے سونپی سفارتیں کیا کیا

تلاش لفظ میں عمروں کی کاوشوں کا ثمر

اندھیرے غار میں گھومیں بصارتیں کیا کیا

کہیں بدن کے ہیں سودے کہیں ضمیروں کے

ہوئی ہیں شہر میں اب کے تجارتیں کیا کیا

سویرے آنکھ کھلی تو نظر میں کچھ بھی نہ تھا

خیال و خواب میں پائیں بشارتیں کیا کیا

دیار زر سے متاع انا بچا لائے

نظر نظر میں بھری تھیں حقارتیں کیا کیا

تن شکستہ کی تعمیر کے لیے راسخؔ

عمل میں لائی گئی ہیں مہارتیں کیا کیا

راسخ عرفانی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(770) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Rasikh Irfani, Khandar Main Dafan Hui Hain Imaratain Kiya Kiya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 9 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Rasikh Irfani.