70 Baras

‏ستّر برس

‏ستّر برس

جب کرکے آئے آگ کے دریا کو پار ھم

صد موجِ خُوں مِلی مُتَلاطم بہَر قدم

جَھیلے ھر ایک گام پہ تاریخ کے سِتَم

ھر پل سہے ھیں سینکڑوں صدمات بیش و کم

ایسا نہیں کہ جَست کوئی بھر کے آئے ھیں

ستّر برس طویل سفَر کر کے آئے ھیں !

ھے رنج کونسا کہ جو ھم نے نہیں سہا

کیا کیا نہ اشک دیدۂ خُونبار سے بہا !

آدھا بدن گنوادیا، آدھا بدن رھا

لیکن زباں سے حرفِ شکایت نہیں کہا

گو تن بدن میں سینکڑوں نیزے گڑے رھے

میداں میں ھم چٹان کی صورت کھڑے رھے

صد شُکر آج بھی نہیں ٹُوٹا ھمارا عزم

الحمد آج بھی ھے وھی اھتمامِ بزم

ھم جنگجُو بلا کے ھیں، چاھے کوئی ھو رزم

بس تھوڑا صبر چاھئیے، تھوڑا سا ضبط و نظم

رخشندہ و جفاکش و پائندہ قوم ھیں

تاریخ ھے گواہ کہ ھم زندہ قوم ھیں

رحمان فارس

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(333) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Rehman Faris, 70 Baras in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Social, Friendship, Hope Urdu Poetry. Also there are 76 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Social, Friendship, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Rehman Faris.