Bacha Hai Uss Ko Yun Na Akaile Kafan Main Dal

بچّہ ھے، اس کو یُوں نہ اکیلے کفن میں ڈال

بچّہ ھے، اس کو یُوں نہ اکیلے کفن میں ڈال

ایک آدھ گُڑیا، چند کھلونے کفن میں ڈال

نازک ھے کونپلوں کی طرح میرا شِیرخوار

سردی بڑی شدید ھے، دُھرے کفن میں ڈال

کپڑے اِسے پسند نہیں ھیں کُھلے کُھلے

چھوٹی سی لاش ھے، اِسے چھوٹے کفن میں ڈال

دفنا اِسے حُسَین کے غم میں لپیٹ کر

یہ کربلائی ھے، اِسے کالے کفن میں ڈال

ننّھا سا ھے یہ پاؤں، وہ چھوٹا سا ھاتھ ھے

میرے جگر کے ٹکڑوں کے ٹکڑے کفن میں ڈال

مُجھ کو بھی گاڑ دے مرے لختِ جگر کے ساتھ

سینے پہ میرے رکھ اِسے، میرے کفن میں ڈال

ڈرتا بہت ھے کیڑے مکوڑوں سے اِس کا دل

کاغذ پہ لکھ یہ بات اور اِس کے کفن میں ڈال

مٹی میں کھیلنے سے لُتھڑ جائے گا سفید

نیلا سجے گا اِس پہ سو نیلے کفن میں ڈال

عیسٰی کی طرح آج کوئی معجزہ دکھا

یہ پھر سے جی اُٹھے، اِسے ایسے کفن میں ڈال

سوتا نہیں ھے یہ مری آغوش کے بغیر

فارس ! مُجھے بھی کاٹ کے اِس کے کفن میں ڈال

رحمان فارس

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(798) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Rehman Faris, Bacha Hai Uss Ko Yun Na Akaile Kafan Main Dal in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 76 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Rehman Faris.