Idher Udhar Kahin Koi Nishaan Tu Ho Ga Hi

اِدھر اُدھر کہیں کوئی نشاں تو ھوگا ھی

اِدھر اُدھر کہیں کوئی نشاں تو ھوگا ھی

یہ رازِ بوسۂ لب ھے، عیاں تو ھوگا ھی !!

تمام شہر جو دھندلا گیا تو حیرت کیوں ؟؟؟

دِلوں میں آگ لگی ھے ، دھواں تو ھوگا ھی

بروزِ حشر مِلے گا ضرور صبر کا پھل

یہاں تُو ھو نہ ھو میرا ، وھاں تو ھوگا ھی

یہ بات نفع پرستوں کو کون سمجھائے ؟؟

کہ کاروبارِ جنُوں میں زیاں تو ھو گا ھی

ھم اس اُمید پہ نکلے ھیں جھیل کی جانب

کہ چاند ھو نہ ھو ، آبِ رواں تو ھوگا ھی

مَیں کُڑھتا رھتا ھوں یہ سوچ کر کہ تیرے پاس

فُلاں بھی بیٹھا ھو شاید ، فُلاں تو ھوگا ھی !

یہ بات مدرسۂ دل میں کھینچ لائی مجھے

کہ درس ھو کہ نہ ھو ، امتحاں تو ھو گا ھی

مگر وہ پھول کے مانند ھلکی پُھلکی ھے !!!

سو اُس پہ عشق کا پتھر گراں تو ھو گا ھی

غزل کے روپ میں چمکے کہ آنکھ سے چھلکے

یہ اندرونے کا دکھ ھے ، بیاں تو ھوگا ھی

بڑی اُمیدیں لگا بیٹھے تھے سو اب فارس !

ملالِ بے رخئ دوستاں تو ھو گا ھی

رحمان فارس

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(655) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Rehman Faris, Idher Udhar Kahin Koi Nishaan Tu Ho Ga Hi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 76 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Rehman Faris.