Pehle Pukarte Thay Mujhe Galiyon K Sath

پہلے پُکارتے تھے مُجھے گالیوں کے ساتھ

پہلے پُکارتے تھے مُجھے گالیوں کے ساتھ

پھر تھک گئے، بُلانے لگے تالیوں کے ساتھ

اِن لڑکیوں کے بھیس میں پریاں بھی ھیں بہت

مت بیٹھیو اُداس بدن والیوں کے ساتھ

چَھن چَھن کے آ رھی تھی اُس اُجلے بدن کی آنچ

پوشاک تھی سیَاہ مگر جالیوں کے ساتھ

ھمدم نہ ھو تو کیا بھلا پینے کا فائدہ ؟

بیٹھا ھُوں کب سے چائے کی دو پیالیوں کے ساتھ

دُنیا سے بھی گُریز ھے، مَے سے بھی احتراز

میرا نہیں ھے ربط اب اِن سالیوں کے ساتھ

شامِ سیاہ اور شبِ تاریک خُوب ھیں

اچھی گُذر رھی ھے اِنہی کالیوں کے ساتھ

چُومے گی شاھزادی اُسی شہ سوار کو

آئے گا جو گُلوں سے لدی ڈالیوں کے ساتھ

کچّے گھروں کے ساتھ ھیں اُونچی حویلیاں

بدحالیاں ھیں شہر میں خُوشحالیوں کے ساتھ

ھونٹوں پہ ھیں نشان تو گالوں پہ ھیں گُلال

کس مُنہ سے گھر کو جاؤ گے ان لالیوں کے ساتھ ؟

کچھ پتّیاں، ذرا سی مہک اور تھوڑا رنگ

بیٹھا ھُوں اِس اُمید پہ مَیں مالیوں کے ساتھ

فارس ! کبھی تو آئیے درگاہِ عشق میں

مَے بھی پلائی جائے گی قوّالیوں کے ساتھ

رحمان فارس

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1211) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Rehman Faris, Pehle Pukarte Thay Mujhe Galiyon K Sath in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 76 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Rehman Faris.