Yeh Kon Mard Aya Hai K Larzaan Hai Kainat

یہ کون مرد آیا کہ لرزاں ھے کائنات ؟

یہ کون مرد آیا کہ لرزاں ھے کائنات ؟

کس کے جلال سے تہہ و بالا ھوئی حیات ؟

سہمے ھیں کس کے خوف سے سارے جری صفات ؟

لب ھائے فرش و عرش پہ ھے زلزلے کی بات

ھر سمت دھاڑتا ھُوا یہ کون شیر ھے ؟

کس کا پسَر یہ مردِ شجاع و دلیر ھے ؟

کس ضرب سے زمان و مکاں میں ھے تھرتھری ؟

کس نے مچائی ھے دلِ اعدا میں کھلبلی ؟

طاری ھے کس کے خوف سے تاروں پہ کپکپی ؟

لیتے ھیں کس کے ڈر سے مہ و مَہر جُھرجُھری ؟

ھاتف نے دی صدا کہ بڑا خاص نام ھے

غازی لقب ھے شیر کا، عبّاس نام ھے

آئے علَم اُٹھائے علمدارِ صف شکن

دکھلادیا لڑائی میں شیرِ خُدا کا فن

رن میں لگا جو نعرۂ اسمائے پنجتن

کانپے مثالِ بَید سواروں کے تن بدن

اللہ رے کربلا میں لڑائی دلیر کی

دو لاکھ گیدڑوں میں تھی دھاڑ ایک شیر کی

غازی کی تیغ جس پہ چلی، سربسر کٹا

بچ کر اِدھر سے نکلا تو جا کر اُدھر کٹا

کٹ کر کوئی گرا تو کوئی چیخ کر کٹا

مُشکل سے ھاتھ پاؤں بچائے تو سر کٹا

غُل تھا کہ اپنی جان بچا کر نکل چلو

اُٹّھے تو مارے جاؤ گے، پنجوں کے بل چلو

پہنچے لبِ فُرات جو عبّاسِ خوش خصال

گرجے کہ آؤ روک لو، ھے کوئی ماں کا لال ؟

دیکھو ھمی تو ھیں پسَرِ شیرِ ذُوالجلال

مُنہ پھیرتے نہیں ھیں کبھی ھم دمِ جدال

دیکھو جو فتح کرنا تھی گھاٹی وہ کر بھی لی

لو گھاٹ پر پہنچ بھی گئے، مشک بھر بھی لی

یہ کہہ کے جب ترائی سے نکلا وہ ذی حشَم

ساری سپاہِ شام اُمڈ آئی ایک دم

کیسے چلاتا تیغ غلامِ شہِ اُمم

اک ھاتھ میں تھی مشک تو اک ھاتھ میں علَم

پھر یُوں ھُوا کہ ایک ھزاروں میں گھر گیا

مولا کا بھائی کتنے سواروں میں گھر گیا

سینے پہ تیغ کھائی، سہے بازوؤں پہ تیر

تھا وردِ یاحفیظ کبھی وردِ یاقدیر

جب مِل کے مارنے لگے نیزے سبھی شریر

گھوڑے پہ جُھک گیا پسَرِ شاہِ قلعہ گیر

خیموں میں واں حُسین بصد یاس گر پڑے

یاں قتل ھو کے حضرتِ عبّاس گر پڑے

خیمے سے نکلی ننّھی سکینہ بچشمِ تر

رو رو کے بولی میرے چچاجان ھیں کدھر ؟

بابا ! اُنہیں بچا کے اُٹھا لائیے ادھر

بازو تو کٹ گئے ھیں، کہیں کٹ نہ جائے سر

پیاسی نہیں مَیں، پانی نہیں چاھئیے مُجھے

اپنے چچا کا رُوئے حسیں چاھئیے مُجھے !

رحمان فارس

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2108) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Rehman Faris, Yeh Kon Mard Aya Hai K Larzaan Hai Kainat in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Marsiya, and the type of this Nazam is Islamic Urdu Poetry. Also there are 76 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Islamic poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Rehman Faris.