Ankhoon Main Wo Ayeen Ju Hansate Hain Mujhe Khawab

آنکھوں میں وہ آئیں تو ہنساتے ہیں مجھے خواب

آنکھوں میں وہ آئیں تو ہنساتے ہیں مجھے خواب

ہر روز نئے باغ دکھاتے ہیں مجھے خواب

اب پیار کے موسم کا ہے آغاز یقیناً

نغمات نئے خوب سناتے ہیں مجھے خواب

ہو نیند پہ چھایا ہوا جب فکر کا بادل

اک سیر نئی سمت کراتے ہیں مجھے خواب

اس زیست کی تلخی سے تو اچھی ہے مری نیند

تتلی کبھی پھولوں سے ملاتے ہیں مجھے خواب

اک درد کا احساس جگانے کے لیے ہی

پھولوں کی طرح خار کے آتے ہیں مجھے خواب

ملتے ہیں دکھانے کو مرا دل ہی کئی لوگ

پھر درد کے صحرا میں سلاتے ہیں مجھے خواب

وہ لوگ سبیلہؔ کے جو بچھڑے ہیں سفر میں

اکثر انہیں کی یاد دلاتے ہیں مجھے خواب

سبیلہ انعام صدیقی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1105) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sabeela Inam Siddiqui, Ankhoon Main Wo Ayeen Ju Hansate Hain Mujhe Khawab in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 23 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sabeela Inam Siddiqui.