Rakhe Har Aik Qadam Pey Ju Mushkil Ki Aagahi

رکھے ہر اک قدم پہ جو مشکل کی آگہی

رکھے ہر اک قدم پہ جو مشکل کی آگہی

ملتی ہے اس کو راہ سے منزل کی آگہی

سیکھا ہے آدمی نے کئی تجربوں کے بعد

طوفان سے ہی ملتی ہے ساحل کی آگہی

اس کا خدا سے رابطہ ہی کچھ عجیب ہے

دنیا کہاں سمجھتی ہے سائل کی آگہی

نظروں کا اعتبار تو ہے پھر بھی میرا دل

ہے اک صحیفہ جس میں مسائل کی آگہی

دن رات جس کے پیار میں رہتی ہوں بے قرار

اس کو نہیں ہے کیوں دل بسمل کی آگہی

یادوں کے اک ہجوم میں رہ کر پتا چلا

تنہائی بھی تو رکھتی ہے محفل کی آگہی

خنجر کا اعتبار نہیں وہ تو صاف ہے

لیکن ملے گی خون سے قاتل کی آگہی

مشق سخن سبیلہؔ نکھارے گی فن کو اور

مطلوب ہے کچھ اور ابھی دل کی آگہی

سبیلہ انعام صدیقی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(436) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sabeela Inam Siddiqui, Rakhe Har Aik Qadam Pey Ju Mushkil Ki Aagahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 23 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sabeela Inam Siddiqui.