Usse Betab Ho Kar Sochti HooN

اسے بیتاب ہو کر سوچتی ہوں

اسے بیتاب ہو کر سوچتی ہوں

میں اک گلفام اکثر سوچتی ہوں

ہوئی حائل کچھ ایسی بد گمانی

میں اک ہیرے کو پتھر سوچتی ہوں

وہ اک لمحہ جو بیتا کل ہے میرا

میں ہر لمحہ وہ منظر سوچتی ہوں

ہوں جس کی ذات سے وابستہ کب سے

اب اس کو اپنا محور سوچتی ہوں

مری ڈولی جہاں سے سج کے نکلی

میں بابل کا وہی گھر سوچتی ہوں

یہ ہاؤ ہو بدن کے گھاؤ پر ہے

مگر میں دل کے نشتر سوچتی ہوں

تمہاری یاد کے بادل جو آئے

تو بن کر باد‌ صر‌صر سوچتی ہوں

سبیلہؔ کیا کہوں منزل کہاں ہے

خدا واقف ہے جو در سوچتی ہوں

سبیلہ انعام صدیقی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(421) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sabeela Inam Siddiqui, Usse Betab Ho Kar Sochti HooN in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 23 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sabeela Inam Siddiqui.