Khel Rachaya Iss Ne Sara Warna Phir Kiyon Hota Main

کھیل رچایا اس نے سارا ورنہ پھر کیوں ہوتا میں

کھیل رچایا اس نے سارا ورنہ پھر کیوں ہوتا میں

اس نے ہی یہ بھیڑ لگائی بنا ہوں صرف تماشا میں

اس نے اپنے دم کو پھونکا اور مجھے بیدار کیا

میں پانی تھا میں ذرہ تھا لمبی نیند سے جاگا میں

اس نے پہلے روپ دیا پھر رنگ دیا پھر اذن دیا

بحر و بر میں برگ و ثمر میں نئے سفر پر نکلا میں

آئینے کی خواہش کر کے خود کو بھی آزار دیے

دیکھ لیا اب آئینے میں کب ہوں تیرے جیسا میں

قتل و غارت کے ہنگامے شور شرابہ تو ہوگا

مجھ کو یہاں پر بھیجنے والے وہاں نہ رہتا اچھا میں

صابر وسیم

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(411) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sabir Waseem, Khel Rachaya Iss Ne Sara Warna Phir Kiyon Hota Main in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 24 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sabir Waseem.