Din Ko Masmar Howay Raat Ko Tamer Howay

دن کو مسمار ہوئے رات کو تعمیر ہوئے

دن کو مسمار ہوئے رات کو تعمیر ہوئے

خواب ہی خواب فقط روح کی جاگیر ہوئے

عمر بھر لکھتے رہے پھر بھی ورق سادہ رہا

جانے کیا لفظ تھے جو ہم سے نہ تحریر ہوئے

یہ الگ دکھ ہے کہ ہیں تیرے دکھوں سے آزاد

یہ الگ قید ہے ہم کیوں نہیں زنجیر ہوئے

دیدہ و دل میں ترے عکس کی تشکیل سے ہم

دھول سے پھول ہوئے رنگ سے تصویر ہوئے

کچھ نہیں یاد کہ شب رقص کی محفل میں ظفرؔ

ہم جدا کس سے ہوئے کس سے بغل گیر ہوئے

صابر ظفر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(993) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sabir Zafar, Din Ko Masmar Howay Raat Ko Tamer Howay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 123 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sabir Zafar.