Raat Ko Khawab Ho Gayi Din Ko Khayaal Ho Gayi

رات کو خواب ہو گئی دن کو خیال ہو گئی

رات کو خواب ہو گئی دن کو خیال ہو گئی

اپنے لیے تو زندگی ایک سوال ہو گئی

ڈال کے خاک چاک پر چل دیا ایسے کوزہ گر

جیسے نمود خشک و تر رو بہ زوال ہو گئی

پھول نے پھول کو چھوا جشن وصال تو ہوا

یعنی کوئی نباہ کی رسم بحال ہو گئی

تجھ کو کہاں سے کھوجتا جسم زمیں پہ بوجھ تھا

آخر اسی تکان سے روح نڈھال ہو گئی

کون تھا ایسا ہم سفر کون بچھڑ گیا ظفرؔ

موج نشاط رہ گزر وقف ملال ہو گئی

صابر ظفر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(543) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sabir Zafar, Raat Ko Khawab Ho Gayi Din Ko Khayaal Ho Gayi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 123 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sabir Zafar.