" Mere Ghar Ke Raastoon Mein Gali Teri Bhi Hoti "

"میرے گھر کے راستوں میں گلی تیری بھی ہوتی"

قربانی بھی ہوتی ہے محبت میں اے دوست

پھر محبت کے قبیلے میں جگہ تیری بھی ہوتی

تو ایک کے ہی ساتھ کبھی رہتا جو مخلص

پھر عشق کے امتحاں میں جیت تیری بھی ہوتی

انا کی دیواروں کو کبھی توڑتے جو تم

میرے دل میں کوئی جگہ، پھر تیری بھی ہوتی

زبان سے اپنی روز ہی مکر جاتے تھے تم تو

اور چاہتے تھے ہمیں آرزو تیری بھی ہوتی

اور خواہش اب سمٹ کر فقط اتنی سی رہ گئی

میرے گھر کے راستوں میں گلی تیری بھی ہوتی

سعدیہ چوہدری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1841) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sadia Chaudhry, " Mere Ghar Ke Raastoon Mein Gali Teri Bhi Hoti " in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 15 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sadia Chaudhry.