Shikast Aabla Dil Main Naghmi Hai Buhat

شکست آبلۂ دل میں نغمگی ہے بہت

شکست آبلۂ دل میں نغمگی ہے بہت

سنے گا کون کہ دنیا بدل گئی ہے بہت

ہر ایک نقش میں ہے نا تمامیوں کی جھلک

ترے جہاں میں کسی چیز کی کمی ہے بہت

گلے لگا کے گل و نسترن کو رویا ہوں

کہ مجھ کو نظم گلستاں سے آگہی ہے بہت

یہاں کسی کا بھی چہرہ دکھائی دے نہ سکے

حریم دل میں تمنا کی روشنی ہے بہت

میں ایک لمحہ بھی مانند شمع جل نہ سکوں

وہ ایک شب کے لیے ہی سہی جلی ہے بہت

ہے خود فریب بہت میرے عہد کا فن کار

ہنر نہیں بھی تو شور ہنر وری ہے بہت

لبوں پہ جاں ہو تو احساس‌ تلخ و شیریں کیا

کہیں سے زہر ہی لاؤ کہ تشنگی ہے بہت

خرد کو ناز ہے کیوں رسم کجکلاہی پر

سر جنوں کے لیے مشت خاک بھی ہے بہت

گراں ہے جنس وفا اور مشتری نایاب

ہزار بار لٹا ہوں کہ دل غنی ہے بہت

عجب نشاط کے پہلو غم حبیب میں ہیں

کہ ڈوبتی نہیں یہ ناؤ ڈولتی ہے بہت

تمہارا نام کسی اجنبی کے لب پر تھا

ذرا سی بات تھی دل کو مگر لگی ہے بہت

دم وداع میں یوں مسکرا رہا ہوں نسیمؔ

کہ جیسے ان سے جدائی کی بھی خوشی ہے بہت

صادق نسیم

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(551) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Sadique Naseem, Shikast Aabla Dil Main Naghmi Hai Buhat in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 16 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Sadique Naseem.