Aik Barg Khushk Se Gul Taza Tak Aa Gaye

اک برگ خشک سے گل تازہ تک آ گئے

اک برگ خشک سے گل تازہ تک آ گئے

ہم شہر دل سے جسم کے صحرا تک آ گئے

اس شام ڈوبنے کی تمنا نہیں رہی

جس شام تیرے حسن کے دریا تک آ گئے

کچھ لوگ ابتدائے رفاقت سے قبل ہی

آئندہ کے ہر ایک گزشتہ تک آ گئے

یہ کیا کہ تم سے راز محبت نہیں چھپا

یہ کیا کہ تم بھی شوق تماشا تک آ گئے

بیزارئ کمال سے اتنا ہوا کہ ہم

آرام سے زوال تمنا تک آ گئے

سعید احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(562) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Saeed Ahmad, Aik Barg Khushk Se Gul Taza Tak Aa Gaye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 22 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Saeed Ahmad.