Hairat Peham Hue Khawab Se Mehmaan Tere

حیرت پیہم ہوئے خواب سے مہماں ترے

حیرت پیہم ہوئے خواب سے مہماں ترے

رات چراغوں میں کیوں بجھ گئے امکاں ترے

ایک قدم لغزشیں راہ میں آ کر ملیں

روٹھ گئے تجھ سے پھر دشت و بیاباں ترے

عشق کے اندھے خدا حسن کا رستہ دکھا

در پہ ترے آ گئے بے سر و ساماں ترے

نشہ تھا کیسا عجب خواب کہانی میں جب

آنکھ تھی روشن مری نقش تھے عریاں ترے

اک ابدی ہجر کی فصل ہری ہو گئی

بھول گئے وقت کو وعدہ و پیماں ترے

شوق بہار خیال چوم کے چل ڈال ڈال

پھول پریشاں ترے باغ ہیں ویراں ترے

سعید احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(453) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Saeed Ahmad, Hairat Peham Hue Khawab Se Mehmaan Tere in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 22 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Saeed Ahmad.